زندہ رہنا ہے تو قاتل کی سفارش چاہیئے دھماکے میں آٹھ کلو بارودی مواد استعمال کیا گیا، مرنے والوں کی تعداد 16 اور زخمیوں کی تعداد 36 ہوگئی.

پشاور (نمائندہ خصوصی) زندہ رہنا ہے تو قاتل کی سفارش چاہیے
پولیس ذرائع نے ریاست نامہ کو بتایا کہ ہارون بلور کی سیکیوریٹی کے لیے دو کانسٹیبل موجود تھے اور دونوں کی ان کےساتھ ہی ہلاکت کی اطلاعات ہیں. انہوں نے بتایا کہ ابتدائی اطلاعات کے مطابق دھماکے میں 8 کلو بارودی مواد استعمال کیا گیا ہے اور دھماکہ خودکش ہی تھا. ہسپتال ذرائع کے مطابق مرنے والوں کی تعداد 16 ہو گئی ہے جبکہ 36 سے زیادہ افراد زخمی ہیں. تمام سیاسی جماعتوں کے سربراہان اور رہنماؤں نے واقعہ کی شدید مذمت کی ہے، یاد رہے کہ آج شام ہی ڈی جی آئی ایس پی آر نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے دعویٰ کیا تھا کہ دہشت گردی کو مکمل طور پر ختم کر دیا گیا ہے،انہوں نے کہا تھا کہ آج سیاست دان آزادی سے انتخابی مہم چلا رہے ہیں تو یہ فوج کی قربانیوں کا کمال ہے

dead body haroon bilour

اپنا تبصرہ بھیجیں