لومڑ میاں کی شادی—حسنات احمد چوہان

جنگل میں عید کا سماں تھا ۔ سارے جانور ڈھول کی تھاپ پر رقص کر رہے تھے ۔ مرغ اپنے پر پھیلا کر اچھلتا تو ادھر مور اپنے پر پھیلا دیتا اور سب کی توجہ کا مرکز بن جاتا ۔ہاتھی اپنی لمبی سونڈ ہلاتا تو ادھر چیتا اپنی دم ہلا کر سب کو خوش کردیتا مزید پڑھیں

بلی کی آپ بیتی—-شجاعت علی راہی (قسط نمبر11)

کالی بلی نیا واقعہ سننے سے پہلے ایک اور مزے کی بات سن لو نورالعین مجھے انگریزی پڑھانے کی کوشش کرتی ہے اور مجھ سے،پتہ نہیں،انگریزی میں کیا گڑپڑ کیا باتیں کرتی رہتی ہے جبکہ گل اندام مجھ سے اکثر سوالات پوچھتی رہتی ہے جن کے میں نہایت آسان اور صحیح جوابات دیتی ہوں.آپ کو مزید پڑھیں

انکل پھینکو ہوٹل گئے (بچوں کے لیے کہانی)، سید علی مجتبیٰ

انکل پھینکو کو بہت بھوک لگی۔انکل پھینکو کے گھر میں کچھ تھا بھی نہیں ۔اچانک ان کے ایک دوست کا فون آیا ۔انکل پھینکو نے فون کو اٹھایا۔اور پوچھا کہ کون ہیں۔جواب آیا تمہارا دوست تمہارا یار قصور وار۔انکل پھینکو نے کہا قصور وار آپ۔قصور وار نے کہا ہاں میں۔چلو یار آج ہوٹل چلتے ہیں۔انکل مزید پڑھیں

وہ پرانا کنواں–تنزیلہ یوسف لاہور

حارث نے خوفزدہ نظروں سے دونوں کو دیکھا۔ دونوں ایک زور دار قہقہہ لگا کر اس کے گرد گھومے اور اٹھکیلیاں کرتے اس کی نظروں سے اوجھل ہوگئے۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ “منظور علی! کام ہوگیا کہ نہیں؟” اسکول کے ہیڈ ماسٹر صاحب نے چوکیدار سے کام کے متعلق پوچھا۔ “نہیں سر جی۔ ایسا لگتا ہے کہ کوئی مزید پڑھیں

زوال کے اسباب—حفصہ فیصل

فائزہ اٹھ جاؤ٬ فجر کا وقت نکلا جارہا ہے ۔ جی ا می ! اور پھر فائزہ آنکھیں ملتی بیت الخلاء کی طرف چل پڑی۔ منیزہ بیگم کا گھرانہ ایک مذہبی گھرانہ تھا بلکہ اسّی کی دہائی میں تقریبا معاشرے کا ہر گھر اسی زمرے میں آتا تھا۔ مگر پھر ٹیلی ویژن کے عفریت نے مزید پڑھیں

بلی کی آپ بیتی—قسط نمبر 10،شجاعت علی راہی

یہ بلی، تمہارے پاس کہاں سے آگئی؟ انمول جی،یہ جان کر کہ وہ بچی تم نہیں ہو، میرا دل ڈوبنے لگا لیکن اب کیا کر سکتی تھی- ان لوگوں نے مجھے حیرت سے دیکھا اور اس بچی نے مجھے گود میں اٹھا لیا-وہ مجھے اپنے کمرے میں لے گئی اور ایک کرسی پر بٹھا دیا- مزید پڑھیں

جلدی کھانا،صحت کا خزانہ، حفصہ فیصل

“علی بیٹا آجاؤ….دسترخوان لگ گیا ہے، امی نےآواز لگائی. جی امی آیا..علی نے جواب دیا، مگر… علی!!!! ہمارا آدھا کھانا ہوچکا..ابو نے غصے سے آواز لگائی. ابو….بس تھوڑی سی گیم رہتی ہے” علی موبائل میی گیم کھیلتے ہوئے محویت سے بولا. ……………………………………………………………………………………………………………………………………….. علی ایک دس سالہ بچہ تھا ، تعلیم میں مناسب اور والدین کا مزید پڑھیں

بلی کی آپ بیتی(قسط نمبر 9)

نورالعین اور اندام کے گھر انمول!تمھاری امی کی طرح تمھارے ابو بھی بہت اچھے ہیں، میرا ایسا ہی خیال رکھتے ہیں۔جیسا تمھارا لیکن میں حیران ہوں کہ میرے ابو کون ہیں اور کہاں ہیں۔میری امی نے تو مجھ سے ان کے بارے میں کبھی کوئی بات ہی نہیں کی، ہو سکتا ہے فوت ہو چکے مزید پڑھیں

بلی کی آپ بیتی—شجاعت علی راہی (قسط نمبر 8)

بلیاں اور گنیز ورلڈ ریکارڈ انمول، تمھارا بھائی شایان مجھے دنیا بھر کی بلیوں کے متعلق عجیب وغریب باتیں بتاتا رہتا ہے۔ ایک دن اس نے ایک رنگارنگ کتاب گنیز بک کھولی ہوئی تھی. ایک دم میری طرف دیکھ کر بول اٹھا :تمھیں پتہ ہے دنیا کی امیر ترین بلی کون تھی؟، میں نے معصومیت مزید پڑھیں

بلی کی آپ بیتی—-شجاعت علی راہی (قسط نمبر 6)

انمول کی امی اور میری امی انمول جی! جب تمھاری امی تمھارے پاس ہوتی ہیں اور تم سے میٹھی میٹھی باتیں کرتی ہیں تو مجھے اپنی امی کی یاد آ جاتی ہے – جب میں بہت چھوٹی تھی، لڑھکتی ہوئی چلتی تھی تو میری امی مجھے منہ میں پکڑ کر ادھر ادھرلےجایا کرتی تھیں، مجھ مزید پڑھیں

بلی کی آپ بیتی-شجاعت علی راہی (قسط نمبر5)

اغوا کی کوشش اور سالگرہ ایک روز انمول مجھے باسکٹ میں ڈال کر اپنے اسکول کے ایک فنگشن میں لے کر گئی- وہاں لڑکیوں نے مزے مزے کے کپڑے پہن رکھے تھے اور تتلیوں کی طرح پھُرپھُراڑتی پھر رہی تھیں- مجھے کئی لڑکیوں نے دیکھا اور پسند کیا- مجھ پر پیار سے ہاتھ پھیرا،میرے ساتھ مزید پڑھیں

بلی کی آپ بیتی—-شجاعت علی راہی،قسط نمبر 4

ہم بلیاں کل اور آج انمول کے دادا بابا یہ موٹی موٹی کتابیں پڑھتے رہتے ہیں اور معلوم نہیں کیا کچھ لکھتے رہتے ہیں-ایک روز کسی سے کہہ رہے تھے ”سب سے قدیم پالتو جانور کتے اور بلیاں ہیں، کتے کو انسان پندرہ ہزار برس سے پالتے چلے آ رہے ہیں- بلیاں بھی ہر زمانے مزید پڑھیں

بلی کی آپ بیتی-شجاعت علی راہی (قسط نمبر 3)

میرا نیا ٹھکانا میں بڑی بے کسی اور خستگی کے عالم میں سڑک پر چلتی چلی جا رہی تھی، مجھے اپنی منزل کا کوئی پتہ نہیں تھا، بس صرف اللہ کا آسرا تھا، میری خوش بختی کہ ایک پیاری سی بچی انمول کی نظر مجھ پر پڑگئی. انمول اپنی امی ابو کے ہمراہ سیر کو مزید پڑھیں

شبنم کی پری–احمد عدنان طارق

پیارے بچو! کیا کبھی آپ صبح سویرے اٹھ کر کسی باغ یا باغیچے کی سیر کو گئے ہیں۔ اگر آپ سورج طلوع ہونے سے پہلے گھاس پر ننگے پاؤں چلے ہوں تو آپ نے سبز مخملی گھاس پر بے شمار خوبصورت شبنم کے ننھے قطرے گرے ہوئے دیکھے ہوں گے۔ اور پھر دھیرے دھیرے جب مزید پڑھیں

بلی کی آپ بیتی — شجاعت علی راہی(قسط نمبر 2)

میرا پہلا ٹھکانہ انمول کی پالتو بلی بننے سے پہلے میں ایک موٹی تازی اور نخریلی عورت کے گھر اپنی امی اور دو بہنوں کے ہمراہ رہتی تھی- کہنے کو تو اس عورت نے ہمیں پال رکھا تھا اور دنیا بھر سے کہتی پھرتی تھی کہ میں ان بلیوں کا بڑا خیال رکھتی ہوں لیکن مزید پڑھیں

بلی کی آپ بیتی — شجاعت علی راہی ( قسط نمبر1)

انمول اور میں آپ مانیں یا نہ مانیں میں مانو بلی ہوں – گلابی ناک والی، نیلی آنکھوں والی مانو بلی. میری شاندار قسم کی مونچھیں ہیں جنہیں آپ گُل مچھے یا وسکرز بھی کہہ سکتے ہیں. یہ میرے لئے انٹینا کا کام کرتی ہیں. یہ تو آپ جانتے ہی ہوں گے کہ ببر شیر مزید پڑھیں

جادوئی انگوٹھی–حسنات احمد چوہان

شہزادہ نور گھوڑے کو برق رفتاری سے دوڑاتا ہوا ملک تاران کی طرف بڑھ رہا تھا ۔شہزادے کا سفید رنگ کا گھوڑا اتنا تیز دوڑ رہا تھا کہ شہزادے کو سڑک کے کنارے کھڑے بڑے بڑے اور جھکے ہوئے تناور درخت بھی نہیں دکھائی دے رہے تھے ،بار بار شہزادے نور کو درختوں کی ٹہنیاں مزید پڑھیں

گھر تو آخر اپنا ہے –وقاص اسلم کمبوہ

شہدائے پشاور کے حوالے سے خصوصی تحریر عمر اپنے والدین کی اکلوتی اور لاڈلی اولاد تھا۔ اس کے والد فرید خان ایک آرمی آفیسر تھے۔ جن کو بڑی منتوں اور مرادوں کے بعد اللہ پاک نے اواد جیسی بڑی دولت سے نوازا تھا۔ وہ آرمی پبلک سکول پشاور کا ہونہار طالب علم تھا۔عمر کی ہر مزید پڑھیں

دوست—حسنات احمد چوہان

عارف تیز تیز قدم بڑھاتے ہوئے تھانے کی طرف جارہا تھا ،ایسے لگ رہا تھا جیسے کوئی بڑی بات ہوئی ہو ورنہ وہ تو تھانے کے پاس سے نہیں گزرتا تھا ۔ اندر داخل ہوتے ہی اس نے آوازیں لگانا شروع کردیں “انسپکٹر صاحب او انسپکٹر صاحب ” “کون ہے بھائی جو صبح صبح چلا مزید پڑھیں

ایک خزانے کی کہانی—-احمد عدنان طارق

دنیا میں بہت سے لوگ ایسے ہیں جو سوتے جاگتے تمنا کرتے ہیں کہ انہیں کہیں سے ڈھیروں دولت مل جائے ۔ اور پھر اس دولت اور اس کے بل بوتے پر ملنے والی طاقت کو وہ جائز اور ناجائز دونوں ڈھنگوں سے استعمال کرسکیں۔ اُنہیں یقین ہوتا ہے کہ یہ سونے کے سکے ہی مزید پڑھیں

پہلی رات——شگفتہ یاسمین

سر! مجھے آپ سے ایک ضروری بات کرنی ہے ،خلیل الرحمن نے اپنے بعد اپنے بھائی کو فوج میں بھرتی کروانے کے ساتھ ہی میجر صاحب کے پاس حاضری بھرتے ہوئے ایک زور دار سلیوٹ کیا اور پھر اپنا مقصد بیان کرتے ہوئے بولا۔ جی ۔جی ضرور !! کیا بات ہے تم اتنے گھبرائے ہوئے مزید پڑھیں

پہلا شکار——احمد عدنان طارق

نیمو ایک چھوٹا سا چوہا تھا۔ جسے دن میں کئی بار اپنے بل سے نکل کر دوڑتے ہوئے گھر کے پچھواڑے جانا پڑتا تھا۔ جہاں گھر کے مکین کوڑے کرکٹ کی ٹوکری میں کوڑا پھینکتے اور نیمو کو ہر دفعہ خاصا کچھ کھانے کو مل جاتا۔ نیمو بل سے نکلتے وقت ہمیشہ احتیاط کرتا کہ مزید پڑھیں

پانچ روپے کا قرض—وقاص اسلم کمبوہ

چولہے کی آگ رات کے اندھیرے کو چیر کر روشنی کرنے کی کوشش کر رہی تھی، اس روشنی میں فریال اور فریحہ اپنے امی ابو کے ساتھ بیٹھے کھانا کھا رہے تھے ۔ یہ ایک کچا گھر تھا جس کی کل تعمیرات ایک کمرے اور ایک چھوٹے سے برآمدے پر مشتمل تھیں.۔ بجلی ، گیس مزید پڑھیں

کافی میں نمک——احمد عدنان طارق

ہمارے پڑوس میں الیاس صاحب اپنے خاندا ن کے ساتھ رہتے ہیں۔ سارے محلہ میں وہ اپنی دانائی کی وجہ سے مشہور ہیں۔ لوگ اس لیے بھی ان سے متاثر رہتے ہیں کہ وہ کوئی بھی گھریلو مسئلہ باہمی مشورہ کے حل نہیں کرتے۔ ایک دفعہ کا ذکر ہے کہ بیگم الیاس ایک غلطی کر مزید پڑھیں

بولیویا کی بد روح——-احمد عدنان طارق

بولیولا میں رہنے والے اس حقیقت سے بخوبی واقف تھے کہ ان کا جنگل روحوں سے اٹا پڑا تھااور ان روحوں میں سے بھی زیادہ بدروحیں تھیں۔ لوگ جانتے تھے کہ جب بھی ان سے مڈ بھیڑ ہو تو ان سے ڈرنا چاہیے اور بہت محتاط ہونا چاہیے۔ ان روحوں میں سے سب سے زیادہ مزید پڑھیں

بوڑھا معاذ——–احمد عدنان طارق

ایک دفعہ کا ذکر ہے کہیں ایک لڑکی رہتی تھی جس کا نام تزئین تھا۔ ابھی اس کی عمر صرف آٹھ دس سال تھی۔ لیکن جس بات کے لیے وہ مشہور ہوچکی تھی وہ تھی اس کی آواز جو بہت بھدی اور ہمیشہ اونچی ہوتی تھی۔ وہ جیسے ہی کھیلنے کے لیے گھر سے باہر مزید پڑھیں

گستاخ انور—-صالحہ صدیقی

گڈ مارننگ سر بچوں نے اپنی سیٹوں سے کھڑے ھو کر کہا اور انتظار کرنے لگے ٹیچر تھوڑے عمر میں ذیادہ کے تھے ان کو بچوں کے سلام کرنے کا انداز اچھا نہ لگا اسی وقت کھڑے کھڑے بچوں کو نصیحت کرڈالی “بیٹا ھمارے سلام میں اتنی مٹھاس اور محبت ھے جب کسی کو سلام مزید پڑھیں

روحی————احمد عدنان طارق

معاذ تیزی سے فٹ پاتھ کے کنارے کنارے یوں جارہا تھا جیسے اس کے پیروں میں بجلی بھری ہو۔ دوڑتے ہوئے کبھی وہ دونوں بازو ہوا میں پھیلا کر چھلانگ بھی لگا دیتا ایسا لگتا جیسے کوئی پرندہ فضا میں اُڑتے ہوئے جھکائی دے رہا ہو۔ آج آخر کار وہ دل کڑا کر کے آسیبی مزید پڑھیں

سبز دروازے کے پیچھے——احمد عدنان طارق

تزئین طارق ایک عام شہر کی ایک عام سی گلی میں ایک عام سے گھر میں رہنے والی چھوٹی بچی تھی۔ تزئین کے گھر کے پیچھے ایک عام سا باغیچہ تھا۔ جس میں عام سے پُھول اُگتے تھے اور اس میں عام سی پگڈنڈیاں بنی ہوئی تھیں۔ لیکن ایک عام سی پگڈنڈی کے آخر پر مزید پڑھیں

خراٹے مصنف: احمد عدنان طارق

رات کے دو بج رہے تھے۔ ہمیشہ کی طرح الیاس صاحب باورچی خانے میں تھے اور اپنے لیے چائے بنارہے تھے ۔ واقعی دو بجے رات؟ جی بالکل آپ نے صحیح پڑھا2بجے رات۔ ویسے تو بارہ بجے کے بعد اگلی تاریخ بدل جاتی ہے اور لکھنا تو صبح کے دو بجے چاہیے۔ لیکن اتنی اندھیری مزید پڑھیں

کہانی: لوٹ کے بدھو ، مصنف: احمد عدنان طارق

اب خزاں کی آمد آمد تھی۔ جنگل کے درختوں کے پتے مسلسل جھڑرہے تھے اور ہوا میں خنکی ہر لحظہ بڑھ رہی تھی۔ جنگل کے سب ہی جانور سردیوں کی مکمل آمد سے پہلے اپنی تیاریاں مکمل کرنے میں مشغول تھے۔ ایک دن میاں لومڑ شکار سے واپس آئے تو اپنی بیوی سے کہنے لگے۔ مزید پڑھیں

کہانی: سنہری قید، مصنف: احمد عدنان طارق

کہیں دور ایک بادشاہ حکومت کیا کرتاتھا اس کے پاس ایک پالتو سنہری پرندہ تھا جو ایک سونے کے پنجرے میں رہتا تھا یہ سنہری پرندہ بڑے مزے کی زندگی گذاررہا تھا۔ ہر روز بادشاہ کے مصاحب اس کے لیے کھانا اور پینے کے کے مزے مزے کی چیزیں لاتے اور اس کے انتہائی دل مزید پڑھیں

گلہری کا خزانہ احمد عدنان طارق

برف کے گالے اب موتیوں کی طرح جنگل کے درختوں کی شاخوں پر چمکنے لگے تھے ان درختو ں سے پتے ایک مدت ہوئی جھڑ کر زمین پر گر چکے تھے اور وہ ٹند منڈ کھڑے اب برف گرنے سے سردی کی شدت جھیل رہے تھے۔ جنگل کے فرش پر بھی کسی قسم کی کوئی مزید پڑھیں

کہانی: دوسری باری مصنف: صداقت حسین ساجد

دوسری بار صداقت حسین ساجد چار دن ہسپتال میں گزار کر آج نعیم گھر لوٹا تھا ۔ اسے دل کا دورہ پڑا تھا ۔ یہ تو اس کی زندگی تھی کہ وقت پر ہسپتال پہنچ گیا تھا ۔ آگے ڈاکٹر بھی اچھا اور با اخلاق تھا کہ اس نے فوراً ہی اسے داخل کر کے مزید پڑھیں

کہانی: غلام ابن غلام مصنف: محمد ریاست

“اوئے جلدی کر _____”خادم حسین دھاڑا ۔ خادم حسین اینٹوں کے بھٹے کا ٹھیکیدار تھا ۔کوئی پچاس سال کے لگ بھگ اُس کی عمر تھی مگر سر اور داڑھی کے بال آٹے کی طرح سفید تھے ،چہرے پر وہ کرختگی تھی جو اکثر مستقل غصّے میں رہنے والوں کے چہرے پر آجاتی ہے ۔وہ بان مزید پڑھیں